Type Here to Get Search Results !

Khubsurati Shayari Tarif Shayari Mahebooba Ki Tarif Shayari

0

Khubsurati Shayari Tarif Shayari Mahebooba Ki Tarif Shayari



 وہ کہتی ہے میری آنکھوں میں دیکھو 

میں نے کہا مجھے تیرنا نہیں آتا 


سارے گلاب مدہم دکھائی دیتے ہیں 

نظر جب بھی تیرے چہرے کا طواف کرتی ہے




میرے دل سے پوچھ تیرے حسن میں کیا رکھا ہے

پھول سے چہرے میں شولوں کو چھپا رکھا ہے



پائل نہیں پہنتی ہیں کچھ حسینائیں اپنے پاؤں میں 

بس ایک کالے دھاگے سے ہی قہر برساتی ہیں




یہ ادا یہ شوخیاں رخسار ولب کی سرخیاں 

آئینہ شرما گیا تیرے سنور جانے کے بعد 



حیا اور وفا جس عورت میں ہو اس عورت سے 

بڑھ کر کوئی عورت خوبصورت نہیں ہوسکتی




بہت پر کشش آتی ہیں سیلفیاں ہماری 

سنا ہے لوگ ہم کو زوم کر کے دیکھتے ہیں



شعلہ حسن سے جل جائے نہ چہرے کا نقاب 

اپنے رخسار سے پردے کو ہٹائے رکھئے 



رخ پہ لہراتی ہیں کبھی شانوں سے الجھ پڑتی ہیں 

تو نےزلفوں کو بہت سر پہ چڑھا رکھا ہے


اس کو پردے کا تردد نہیں کرنا پڑتا

ایسا چہرہ ہے کہ دیکھیں تو حیا آتی ہے

Post a Comment

0 Comments